Breaking News

6/recent/ticker-posts

Header Ads Widget

Ameer Hamza First Step With Kitab Nagri

Ameer Hamza First Step With Kitab Nagri

Ameer Hamza First Step With Kitab Nagri

السلام علیکم جیسے کہ آپ سب جانتے ہیں کتاب نگری اپنی انفرادیت میں۔خاص کمال رکھتا ہے۔۔ اسی لئے کتاب نگری کی اونر سامعہ کے تجویز کردہ ایک خوبصورت اور منفرد سیگمنٹ کا ہم نے آغاز کیا ہے۔۔ جس میں ہونگے آپ کے پسندیدہ لکھاری سے مزےدار اور چٹپٹے سوال جس میں روائیتی سوال سے منفرد ہونگے ان کی کامیابی کے راز کے سوالات۔۔

ہم جانیں گے لکھاری سے کہ ان کو اس کامیابی کے لئے کتنی دشواری پیش آئی وہ کیسے اس مقام تک پہنچے۔۔

کیا آپ سب ہیں تیار اپنے پسندیدہ لکھاری کی کامیابی کا راز جاننے کے لئے تو میرے ساتھ رہیں میں لاؤنگی ہر ہفتے آپ کے پسندیدہ لکھاری کا انٹرویو اور سیگمنٹ کا نام ہے "فرسٹ سٹیپ ود کتاب نگری"

 

تو آج ہم ایک نئے منفرد ایکٹیویٹی کے۔ساتھ حاضر ہوئے ہیں جس کا نام ہے "فرسٹ سٹیپ" (پہلا قدم)

اس میں ہم جانیں گے آپ کے پسندیدہ لکھاری کی کامیابی کے سفر کی داستان

اور آج ہم جس لکھاری سے ان کے اس لکھاری کی دنیا میں سفر سے متعلق سوال کریں گے وہ آپ سب کے اور ہمارے دلعزیز " امیر حمزہ ہیں"۔

 

سوال نمبر 1: السلام علیکم کیسے ہیں آپ؟

جواب:وعلیکم اسلام۔۔۔۔!! اللہ کا کرم ہے میں بالکل ٹھیک ہوں۔۔۔

******

سوال نمبر 2: اپنا مختصر سا تعارف کروادیں۔۔۔۔

 جواب: نام: امیر حمزہ  شہر: میلسی (دل والوں کا شہر)

*********

سوال نمبر3: آپ کو لکھنے کا شوق کب سے پیدا ہوا؟

 جواب:لکھنے کا شوق کب پیدا ہوا یہ بتانا مشکل ہے۔۔۔۔۔بچپن سے ہی کہانیاں بُننے کی طلب تھی۔۔۔۔۔مکالمے لکھنا۔۔۔۔ منظر کشی۔۔۔۔کہانیاں سننا پھر اپنی طرف سے بنا لینا۔۔۔۔۔۔یہ سب بچپن سے ہی میرے ساتھ رہا۔۔۔۔۔۔ماشااللہ سے۔۔۔۔۔۔

**********

سوال نمبر 4 : اچھا اب یہ بتائیں آپ کو کب لگا کہ آپ کو لکھاری بننا چاہئے؟"

 جواب: اگر سچ بتاؤں تو۔۔۔۔۔ابھی ایک سال پہلے۔۔۔۔۔جب میں نے قلم کو سیریئس لیا۔۔۔۔۔۔لکھنے کا شوق تو بچپن سے تھا۔۔۔۔۔پر جب لوگوں نے میرے لکھے کو سراہایا تو اور لکھنے کی خواہش ہوئی۔۔۔۔۔۔۔اور اب پچھلے ایک سال سے میں اپنے اندر بہت کوشش کی کچھ اور ڈھونڈنے کی۔۔۔۔۔۔کوئی اور خاص بات جس کو مقصد بنا کر زندگی میں آگے بڑھوں۔۔۔۔۔پر میری، تلاشِ خودی الفاظوں، کہانیوں اور کرداروں پہ ہی ختم ہوتی نظر آئی۔۔۔۔شاید اب مجھ میں خون سے زیادہ الفاظ ہیں۔۔۔۔۔جو میرا جینا آسان بنا رہے ہیں۔۔۔۔۔۔میرے جسم میں گردش کرکے۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر 5 : پہلا ناول لکھتے وقت کیسے تاثرات تھے؟ 

 جواب: ایک الگ ہی جنون سا تھا۔۔۔۔۔۔یوں لگ رہا تھا جیسے بہت بڑا اعزاز ہو لکھنا۔۔۔۔۔۔پھر اپنے لکھے پہ قارئین کی تعریف سننا۔۔۔۔۔جب میرا پہلا ناول "کتاب نگری ویب" پہ پبلیش ہوا تھا اس دن میں نے دو نفل شکرانے کے ادا کیے تھے۔۔۔۔۔میں اتنا خوش تھا۔۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر6: شروع میں لوگوں کے تبصرے اور تعریف سن کر کیسا محسوس ہوتا تھا؟

 جواب: لوگوں کے تبصرے اور تعریف سن کر بہت اچھا لگا وہ سب میری امید سے کہیں زیادہ تھا۔۔۔۔۔۔اُس سب کے لیے میں اپنے ہر ریڈر کا بہت شکر گزار ہوں۔۔۔۔۔لکھنے کے لیے جتنی روشنائی کی ضروری ہوتی ہے۔۔۔۔۔اتنا ہی کہانی کے لیے پڑھنے والے لوگ ضروری ہوتے ہیں۔۔۔اور لکھاری قارئین کے بغیر ادھورا ہے۔۔۔۔۔لکھاری کی تکمیل قارئین سے ہے۔۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر7: سب سے پہلے آپ کی تحریر کی تعریف کس نے کی تھی؟؟

 جواب:کتاب نگری کی ہی ایک ریڈر تھیں۔۔۔۔۔جنہوں نے میرے پہلے ناول پہ تبصر کیا تھا۔۔۔۔ "دعا نعیم" انکا کمنٹ مجھے بہت خوشی مہیا کرگیا تھا۔۔۔۔۔

******

سوال نمبر 8:آپ نے یقین کر لیا تھا کہ آپ اچھا لکھتے ہیں؟؟

 جواب: پہلے نہیں کیا تھا۔۔۔۔۔پر اب کرلیا ہے۔۔۔۔۔۔میں نے خود کو بہتر بنایا ہے۔۔۔۔۔سمجھا نہیں۔۔۔۔۔۔میں اپنی غلطیوں پہ پریشان ہونے والا بندہ ہوں۔۔۔۔۔ناول کی کئی کئی بار پروف ریڈنگ کرتا ہوں۔۔۔۔ چھوٹے چھوٹے الفاظ، سین، ڈائیلاگز اور جملوں کا دھیان رکھتا ہوں۔۔۔۔اور اب پڑھ کے لگتا ہے کہ میں اچھا لکھتا ہوں۔۔۔۔کیونکہ بہت سے لوگوں نے بھی یہ بات کہی ہے۔۔۔۔۔۔اور وہ لوگ جنہیں مجھ سے کوئی لالچ نہیں تھا۔۔۔۔۔۔اور نہ انہیں میرا دل رکھنے کی ضرورت تھی۔۔۔۔۔۔انہوں نے جو کہا ناول پڑھنے کے بعد سچ کہا۔۔۔اور مجھے بہت خوشی ہوتی ہے جب لوگ مجھے عمیرہ احمد، نمرہ احمد اور ہاشم ندیم جیسے عظیم لکھاریوں میں گنتے ہیں۔۔۔۔۔یہ سچ میں ایک بہت بڑی کامیابی ہے میرے لیے۔۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر9 : اپنے سب سے پسندیدہ کردار کا نام بتائیں۔

 جواب: ویسے تو میرے ناول میں ہر کردار ہی میرا فیورٹ ہوتا ہے۔۔۔۔میں ہر کردار کو دل سے لکھتا ہوں۔۔۔۔۔۔پر زیادہ جو پسند ہیں۔۔۔۔

رفوگر ہر جائی صنم ناول کی "عروش"۔۔۔۔۔۔ اور "حسام" اس کے علاوہ "دل آور" (دشمنِ جان ہے جو میری جان) اور "آغا" (دلِ ریزہ ریزہ) ناول سے۔۔۔۔۔۔۔

********

سوال نمبر 10: آپ کا کون سا ناول ہے جو لگتا ہے آپ کے دل کے بہت قریب ہے؟

 جواب:"دلِ ریزہ ریزہ" یہ ناول وہ ناول ہے جو میں کبھی نہیں بھول سکتا میرا پہلا میچور ناول جسے میں ایک سبق تھا۔۔۔۔ "محبت اور دوستی" کی بناء پہ لکھا گیا ناول۔۔۔۔۔۔اور مجھے خوشی اس بات کی تھی اس ناول کے اختتام پہ، کہ لوگوں نے اس ناول میں جو بات میں نے سمجھانا چاہی وہ سمجھی بھی۔۔۔۔۔۔

********

سوال نمبر11: آپ لکھتے وقت کن باتوں کا خیال رکھتے ہے؟

 جواب:لکھتے وقت میں سین کا بہت خیال رکھتا ہوں۔۔۔۔۔کہ کہیں کچھ ایسا نہ لکھ دوں جو بعد از اگر میرے گھر والے پڑھیں تو مجھے ان کے سامنے شرمندگی ہو۔۔۔۔۔میری کوشش ہوتی ہے کہ رومانس کو فکر میں تبدیل کرکے خوبصورت احساس بنا دوں۔۔۔۔جو پڑھنے میں اچھا لگے۔۔۔۔۔۔اور بعد میں تبصرہ کرتے وقت بھی کسی کے لیے باعثِ شرمندگی نہ ہو۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر12: اچھا یہ بتائیں لکھتے وقت آپ کی کوئی مخصوص جگہ یا وقت ہے یا بس جس وقت بھی فری ہوں لکھتے ہیں؟

 جواب:میری نظر میں یہ الہام ہوتے ہیں۔۔۔۔۔اور الہام کا وقت نہیں ہوتا۔۔۔۔۔میں اسکول میں پڑھاتے وقت بھی اکثر بچوں کو کام دے کر پیپر پین لے کر بیٹھ جاتا ہوں۔۔۔۔۔گھر بھی باہر بھی دوستوں کے ساتھ بھی۔۔۔۔کسی کی بات سے بات نکال لیتا ہوں۔۔۔۔۔کہیں کسی کے الفاظ میں ناول کی تھیم مل جاتی ہے۔۔۔۔۔میں اب ہر انسانی کو بغور دیکھتا ہوں۔۔۔۔۔۔اور اس میں سے اپنا فائدہ ڈھونڈ نکالتا ہوں۔۔۔۔

*******

سوال نمبر13: آگے کیا ارادے ہیں لکھنے کے حوالے سے؟

 جواب:میری ہر نماز کے بعد دعا ہوتی ہے کہ میں اسکریپٹ رائٹر بنوں۔۔۔۔۔۔۔۔۔اور انشاءاللہ اب قلم کا ساتھ نہیں چھوڑنا۔۔۔۔۔میں اب اپنا مقام ناولز میں ہی بنانا چاہتا ہوں۔۔۔۔

*******

سوال نمبر14: آپ۔اگر کسی نئے لکھاری کو کوئی نصیحت کرنا چاہیں یا کوئی ٹپ کہ۔ان کو کامیاب ہونے کے لئے کیا کرنا چاہئیے؟

 جواب:میں بس یہ ہی کہوں گا کہ لکھتے وقت الفاظ کا دھیان رکھا کریں۔۔۔۔۔املاء کی غلطیاں۔۔۔۔۔ٹائپنگ مسٹیکس کو ٹھیک کر لیا کریں۔۔۔۔۔اور اس کے علاوہ اپنے قلم کو آزاد چوڑ دیں۔۔۔۔جو دل کرے وہ لکھیں۔۔۔۔۔۔اور یہ ہی آپ کو کامیاب کرے گا۔۔۔۔پر لکھیں میعاری۔۔۔۔۔

********

سوال نمبر15: آپ کو لکھاری بننے کے لئے کیا دشواری پیش آئی؟

 جواب:ایک ہو تو بتاؤں۔۔۔۔۔مرد کے لیے تو یہ سب بہت مشکل ہے۔۔۔۔۔عورت لڑکی کے لیے ناولز میں بہت سارے راستے ہیں۔۔۔۔۔ڈائجسٹ ہیں۔۔۔۔۔پر مرد کے لیے ایسا کوئی ٹھکانہ نہیں جہاں وہ لکھ سکے۔۔۔۔۔اب ہر مرد بھی سنگین،تھریل، جاسوس نہیں لکھ سکتا۔۔۔۔۔جذبات سب میں ہوتے ہیں۔۔۔۔۔اور مرد کو مجبور کیا جاتا ہے کہ اگر وہ کسی ڈائجسٹ میں لکھے تو جاسوس یا تھریل لکھے۔۔۔۔۔۔مجھے اس بات سے ہمیشہ سے اختلاف رہا ہے کہ ڈائجسٹ میں مرد حضرت کیوں نہیں لکھ سکتے۔۔۔۔؟ آپ عورت کو ہر جگہ مقام دے رہے ہیں برابری دے رہے ہیں مانگ رہے ہیں۔۔۔۔۔پر جب بات مرد کی آتی ہے تو سب چپ ہوجاتے ہیں۔۔۔۔۔۔اگر آپ پڑھنے کا حق سب کو دے رہے ہیں تو لکھنے کا بھی سب کو دیں۔۔۔۔۔اور یہاں میں "کتاب نگری ویب" کو سراہانا چاہوں گا جنہوں نے ہر ایک کو برابری مہیا کی۔۔۔۔خواہ وہ مرد ہے یا عورت۔۔۔۔۔یہاں صرف معیار دیکھا جاتا ہے۔۔۔۔۔اور لوگوں کے خواب۔۔۔۔۔۔اللہ کتاب نگری کو دن دوگنی رات چوگنی ترقی عطا کرے اور یونہی لوگوں کے لیے آسانیاں پیدا کرنے کا زریعہ بنائے رکھے "آمین"

********

سوال نمبر16 : گھر میں کس نے سپورٹ کیا اور کس نے تنقید کی؟؟

 جواب:گھر میں سپورٹ مجھے میری سب سے چھوٹی آنٹی نے "نرگس اقبال" جو میری بہترین دوست بھی ہیں۔۔۔۔اور ہمراز بھی۔۔۔۔۔میں ہر کہانی ان سے ڈسکس کرتا ہوں۔۔۔۔اور وہ بہت توجہ سے میری بات سنتی اور پھر مشورے دیتی ہیں۔۔۔۔۔میں آج اگر اچھا لکھتا ہوں تو اس میں میری آنٹی کا بہت بڑا ہاتھ ہے۔۔۔۔ اللہ انہیں خوش رکھیں "آمین

اور جہاں تک بات تنقید کی ہے۔۔۔۔گھر میں تو کسی نے نہیں کی پر باہر اکثر لوگ تمسخرانہ لہجے میں کہتے ہیں "اچھا جی تو آپ رائٹر ہیں"۔۔۔۔۔ مجھے یہ سن کر اچھا نہیں لگتا۔۔۔۔۔پر قصور انکا نہیں۔۔۔۔۔بات شعور کی ہے۔۔۔۔۔۔اب ان میں کتاب اور الفاظ کا شعور نہیں ہے تو کیا کیا جاسکتا ہے۔؟؟ سوائے انکے حق میں انکی ذہنی حالت کی بہتری کی دعا کے علاوہ۔۔۔۔۔

*********

 

سوال نمبر17: کیا لکھاری کو لکھنے سے پہلے اپنے موضوع پر کام کرنا چاہئے مطلب ریسرچ کرنا چاہئے یا بس جو دل میں آئے وہ لکھ دے؟؟

 جواب:یہ آپ کی کہانی پہ انحصار کرتا ہے۔۔۔۔۔اگر آپ کوئی معاشرتی کہانی لکھ رہے ہیں تو ریسرچ لازمی ہے۔۔۔۔۔ورنہ اگر آپ تخلیقی کہانی ہے تو وہ "دل" پہ چھوڑ دیں۔۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر18 : کسی حساس موضوع میں لکھا کبھی یا اگر لکھیں گے تو کیا سوچ ہوگی آپ کی اس سے پہلے کیا کریں گے؟؟

 جواب: اگر کبھی حساس موضوع پہ لکھا تو ایک مرد کی کہانی لکھوں گا۔۔۔۔۔جس کو ہم آج تک ایک نظر سے دیکھتے آرہے ہیں۔۔۔۔"ظالم انسان"۔۔۔۔جسے میں نہ جذبات ہیں نہ احساس پر یہ بات غلط ہے۔۔۔۔۔مرد میں جذبات ہوتے ہیں۔۔۔۔بس ہم کبھی انکی طرف توجہ نہیں دیتے۔۔۔۔۔ جب دس سال کا بچہ روتا ہے تو ہم کہتے ہیں "لڑکا ہو کر رو رہا ہے"۔۔۔۔۔ اسکا اس بات پہ مذاق اڑاتے ہیں۔۔۔۔ کہتے ہیں "لڑکیاں روتی ہیں۔۔۔۔لڑکے تو بہادر ہوتے ہیں"۔۔۔۔۔ پر ایسا کچھ نہیں ہے۔۔۔۔مرد بہادر ہوتا ہے پر بہادری کا یہ مطلب نہیں ہے کہ آپ میں جذبات ہی مر گئے۔۔۔۔۔نہ رونا آتا ہے نہ درد ہوتا ہے۔۔۔۔۔اور آپ پریشان ہوکر بھی مطمئن رہتے ہیں۔۔۔۔۔یہ سب ہماری سوچ ہے۔۔۔پر ایسا کچھ نہیں ہوتا۔۔۔۔۔۔مرد سے پوچھیں تو سہی کہ اسکے دل میں کیا ہے۔۔۔۔۔کبھی اسکے سامنے بیٹھ کر اسے کہیں۔۔۔۔کہ آج تم اپنے دل کا حال سناؤ۔۔۔۔اور اگر رونا بھی آئے تو رو لینا۔۔۔۔۔بتاؤ کس کو یاد کرتے ہو۔۔۔۔۔بتاؤ آج کماتے ہوئے مزدوری کرتے دکان چلاتے کتنی دشواریاں آئیں۔۔۔۔ ٹھیلہ سڑکوں پہ گھسیٹے کتنی بار تھکے۔۔۔؟؟ کب کب دھوپ سے ماتھے پہ آیا پسینہ پاؤں کے تلوؤں تک گیا۔۔۔۔۔ جب آپ یہ سب اس سے پوچھیں گے تو آپ مرد کو پہچان سکیں گے۔۔۔۔اسکے بارے میں جان سکیں گے۔۔۔۔۔۔بچے کو بہادر بنائیں۔۔۔۔مرد کے نام پہ پتھر نہ بنائیں۔۔۔۔۔اسکے دوست بنیں۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر19: آپ کے لکھنے کے علاوہ اور کیا مشاغل ہیں یا مصروفیت ؟؟

 جواب: لکھنے کے علاوہ ناول پڑھنا۔۔۔۔۔بس اب یہی مشغلہ ہے۔۔۔۔اور مصروفیات تو کام کی ہیں جیسے اسکول جانا پڑھانا خود پڑھنا وغیرہ وغیرہ۔۔۔۔

********

سوال نمبر20 : اچھا یہ بتائیں اپنی دوسری مصروفیات اور لکھنے کے وقت کو مینیج کرنا آسان ہوتا ہے یا مشکل پیش آتی ہے؟؟

 جواب:بہت مشکل ہوتا ہے۔۔۔۔۔کبھی کبھی تو پورے دن کے کام اتنا تھکا دیتے ہیں کہ نیند سے بے حال ہوجاتے ہیں۔۔۔۔پر میں نیند کو چھوڑ کر لکھنے کو ترجیح دیتا ہوں۔۔۔۔۔۔میں لکھے بغیر اب نہیں رہ سکتا۔۔۔۔۔

******

سوال نمبر21: آپ ذیادہ تر کس چیز میں لکھتے ہیں موبائل لیپ ٹاپ یا کاغذ؟؟

 جواب:موبائل پہ۔۔۔۔۔

********

سوال نمبر 22: قاری کی کون سی بات یا کون سا سوال آپ کو ایریٹیٹ کرتا ہے؟؟

 جواب:"ہیرو کونسا ہے کہانی میں۔۔؟"۔۔۔۔ یہ بات مجھے بہت ایریٹیٹ کرتی ہے۔۔۔یا پھر "نیکسٹ"۔۔۔۔۔ یہ کمنٹ مجھے اچھے نہیں لگتے۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر 23 : مزید کیا کرنا چاہتے ہیں آپ کو لگتا ہے کامیابی آپ کی منتظر ہے؟؟

 جواب:میری کامیابی نماز کے بعد ہی مجھے ملتی ہے۔۔۔۔اس لیے میں دلجمعی سے نماز پڑھتا ہوں۔۔۔۔اور ہر کامیاب کے لیے دعا کرتا ہوں۔۔۔۔۔اور مجھے کامیاب پھر مل بھی جاتی ہے۔۔۔۔اللہ کا بہت شکر ہے۔۔۔۔۔

******

سوال نمبر 24: کسی کو موٹیویٹ کرنے کے لئے کون سے الفاظ استعمال کرتے ہیں؟؟

 جواب:میں اکثر اپنی کلاس کے بچوں کو کہتا ہوں۔۔۔۔کہ لوگوں کی بات نہ سنا کریں۔۔۔۔۔لوگو جو آپ میں نقص نکالتے ہیں۔۔۔۔ان کو دل سے نہ لگایا کریں۔۔۔۔آپ کا نام "common noun" ہے یہ نام ہر تیسرے شخص کا ہوسکتا ہے۔۔۔۔۔ پر آپ کی ذات ایک ہے آپ جیسا کوئی نہیں۔۔۔۔۔ آپ کی ذات "Proper Noun" ہے اور پارپر "noun" خاص چیز ہوتی ہے۔۔۔۔۔تو آپ بھی خاص ہیں۔۔۔۔اپنے آپ سے پیار کریں گے تو دوسروں سے پیار ملے گا۔۔۔۔۔کسی کو دیکھ کر نہیں چلتے۔۔۔۔۔راستہ دیکھ کر چلنا چاہیے۔۔۔۔۔دوسروں کو دیکھ کر چلنے والا شخص گرجاتا ہے۔۔۔۔پر راستہ دیکھ کے چلنے والا منزل تک صحیح سلامت پہنچ جاتا ہے۔۔۔۔۔۔

*******

سوال نمبر25: اب اپنے قارئین کے لئے کوئی اچھی بات یا نصیحت۔۔۔

 جواب:یہ ہی کے لوگوں کی باتوں کو دل سے نہ لگائیں۔۔۔۔آپ خاص ہیں۔۔۔۔آپ جیسے لوگ بار بار نہیں آئیں گے۔۔۔۔تو کسی کے لیے بھی خود کو ضائع نہ کریں۔۔۔

********

سوال نمبر 26: قارئین کے لیے کوئ پیغام ؟

 جواب:لوگوں کے لیے آسانیاں پیدا کریں۔۔۔۔

******

سوال نمبر 27:کتاب نگری ویب سائٹ ، اونر سامعہ چوہدری کے نام کچھ قیمتی الفاظ ؟

 جواب:"کتاب نگری ویب" کے لیے تو میرے پاس الفاظ ہی نہیں ہیں۔۔۔۔بس بہت ساری دعائیں۔۔۔۔۔یہ میری کامیابی کی سیڑھی ہے۔۔۔۔۔اس ویب نے مجھے "اپنا آپ" دیا ہے مجھے میرے "فن" سے آشنا کروایا ہے۔۔۔۔۔۔اور سامعہ چوہدری(آپی)   ایک بہت اچھے اخلاق کی لڑکی ہیں۔۔۔۔اللہ انکے نصیب اچھے کرے۔۔۔۔۔۔اور اگر کل کو میں اسکریپٹ رائٹر بن گیا اور مجھے کسی مارننگ شو میں بلایا گیا تو میں سامعہ آپی کو لے کر جانا چاہوں گا (یہ بس میری ایک خواہش ہے🙈) تاکہ لوگوں کو پتہ چلے کہ مجھے پالش کرنے اور یہاں تک پہنچانے والی یہ اس ویب کی اونر ہیں۔۔۔۔۔۔باقی اللہ میری بہن کو بہت خوش رکھے۔۔۔۔قمست کے پنوں پہ سونے کے الفاظ سے انکا نصیب لکھا جائے "آمین"۔۔۔۔۔۔

*******


Post a comment

2 Comments

  1. I never read your any novel but after this interview I m gonna read ur novel.v nice interview

    ReplyDelete
  2. I m the one who read almost all novels , Afsana's , even every writings of Ameer Hamza �� and I always said that I could not found words to explain "what a great writer u are "!!��❤ all words are too small to write in your appreciation ❤❤❤��......i think he has all the skills of writing that a *great writer* have to be�������� ........i m also the one of them who hates reading
    even books�� ...... But after reading His❤ writings not only I became the bigest fan of Him���� but i got the passion of writng ����.......i m also writing an afsana ��....but i don't know when it will complete ��.... I have too shortage of time but i just love to write ❤.......and it is also too difficult for Hm to write for us������........u r really really a great writer and a great
    man of hilarious thinking�� ��clap for heart ��❤❤❤

    ReplyDelete