Breaking News

6/recent/ticker-posts

Header Ads Widget

Raah E Yaar Jab Mile Novel by Iram Raheel Episode 14

Raah E Yaar Jab Mile Novel by Iram Raheel Episode 14

Raah E Yaar Jab Mile Novel by Iram Raheel Episode 14

Novel Name : Raah E Yaar Jab Mile
Writer Name : Iram Raheel
Category : Kitab Nagri Special

"میرے کپڑے مجھے ہمیشہ تیار ملیں... اور اب سے یہ سب تم دیکھو گی میرا ناشتہ، لنچ ،ڈنر.... سب تمہاری ذمہ داری ہو گی... اور اگر تم نے اس کام کو سیریس نہ لیا تو.... اسیرہ بخت انجام کی ذمہ دار بھی تم ہو گی...." فرزام نے الماری کو بند کرتے ہوئے اس کا رخ اپنی جانب کیا۔اسیرہ کی پشت الماری سے لگ چکی تھی۔بیچ کا فاصلہ ختم کیے وہ اسے باور کروا رہا تھا۔

" سمجھیں یا نہیں... " فرزام نے اس کے دائیں بائیں دونوں جانب ہاتھ رکھے تھے۔وہ اس وقت انتہائی سنجیدہ لگ رہا تھا۔اسیرہ کو اس سے ایسی توقع بھی کہاں تھی۔اس نے اپنا چہرے کا رخ دوسری جانب کیا تھا۔

Kitab Nagri start a journey for all social media writers to publish their writes.Welcome To All Writers,Test your writing abilities.

They write romantic novels,forced marriage,hero police officer based urdu novel,very romantic urdu novels,full romantic urdu novel,urdu novels,best romantic urdu novels,full hot romantic urdu novels,famous urdu novel,romantic urdu novels list,romantic urdu novels of all times,best urdu romantic novels.

Raah E Yaar Jab Mile Novel by Iram Raheel Episode 14 is available here to online reading.

ان سب ویب،بلاگ،یوٹیوب چینل اور ایپ والوں کو تنبیہ کی جاتی ہےکہ اس ناول کو چوری کر کے پوسٹ کرنے سے باز رہیں ورنہ ادارہ کتاب نگری اور رائیٹرز ان کے خلاف ہر طرح کی قانونی کاروائی کرنے کے مجاز ہونگے۔

Copyright reserved by Kitab Nagri

ناول پڑھنے کے لیے نیچے دیئے گئےامیجز پرکلک کریں 👇👇👇





































































پچھلی اقساط پڑھنے کے لیے نیچے دئیے لنک پر کلک کریں 👇👇👇


ناول پڑھنے کے بعد ویب کومنٹ بوکس میں اپنا تبصرہ پوسٹ کریں اور بتائیے آپ کو قسط کیسی لگی ۔ شکریہ

Post a Comment

3 Comments

  1. Shuker hai episode upload ki jitni b tareef ho thori zaberdast please please next episode jaldi upload ker dia kery merbani how g please pleas

    ReplyDelete